Wednesday, 19 December 2012

Pin It

Widgets

Jama Tum Ho Nahi Saktay...


Tumeh Taqseem Karta



جمع تم ہو نہیں سکتے ، تمھیں منفی سے نفرت ہے
تمھیں تقسیم کرتا ہوں تو حاصل کچھ نہیں آتا

کوئی قاعدہ کوئی کلیہ ، نہ لاگو تم پہ ہو پائے
ضرب تم کو اگر دوں تو حسابوں میں خلل آئے

اکائی کو داھائی پر میں نسبت دوں تو کیسے دوں
نہ الجبرا سے لگتے ہو نہ ہو کہ ڈگری نکل آئے

عمر یہ کٹ گئی میری تمھیں ہمدم سمجھنے میں
جو حل تمہارا اگر نکلے تو سب کچھ ہی الجھ جائے

صفر تھی ابتدا میری ، صفر ہی اب تلک میں ہوں
صفر ضرب صفر ہوں میں ، نہ جس سے کچھ فرق آئے


Jama Tum Ho Nahi Sakte, Tumeh Manfi Se Nafrat Hai
Tumeh Taqseem Karta Hoon, Tou Hasil Kuch Nahi Aata

Koi Qaaida Koi Kulya, Na Laagu Tum Pe Ho Paey
Zarb Tum Ko Agar Kar Doon , Tou Hisabon Men Khalal Aaey

Ekaee Ko Dahaee Par Men Nisbat Doon Tou Kese Doon
Na Al-Jabra Se Lagte Ho, Na Ho K Degree Nikal Aaey

Umr Yeh Kat Gaee Meri Tumeh Humdam Samjhne Men
Jo Hul Tumhara Agar Nikle Tou Sab Kuch He Ulajh Jaey

Sifar Thi Ibteda Meri, Sifar He Ab Talak Men Hoon
Sifar Zarb-E-Sifar Hoon Men, Na Jis Se Kuch Faraq Aaey…





 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post & Share It.


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.