Sunday, 20 January 2013

Pin It

Widgets

اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں Is Se Pehle K Bewafa Ho Jaen



اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں
کیوں نہ اے دوست ہم جدا ہو جائیں

تو بھی ہیرے سے بن گیا پتھر
ہم بھی کل جانے کیا سے کیا ہو جائیں

تو کہ یکتا تھا بے شمار ہوا
ہم بھی ٹوٹیں تو جا بجا ہو جائیں

ہم بھی مجبوریوں کا عذر کریں
پھر کہیں اور مبتلا ہو جائیں

ہم اگر منزلیں نہ بن پائے
منزلوں تک کا راستہ ہو جائیں

دیر سے سوچ میں ہیں پروانے
راکھ ہو جائیں، یا ہوا ہو جائیں

عشق بھی کھیل ہے نصیبوں کا
خاک ہو جائیں، کیمیا ہو جائیں

اب کے گر تو ملے تو ہم تجھ سے
ایسے لپٹیں تری قبا ہو جائیں

بندگی ہم نے چھوڑ دی ہے فراز
کیا کریں لوگ جب خدا ہو جائیں

بندگی ہم نے چھوڑ دی ہے فراز
کیا کریں لوگ جب خدا ہو جائیں...
 



Is Se Pehle K Bewafa Ho Jaen
Q Na Ae Dost Hum Juda Ho Jaen

Tu Bhi Heere Se Ban Gaya Pathar
Hum Bhi Kal Jane Kia Se Kia Hojaen

Tu K Yakta Tha Beshumaar Howa
Hum Bhi Tooten To Ja Baja Hojaen

Hum Bhi Majburiyon Ka Uzer Karen
Phir Kahin Aur Mubtila  Hojaen

Agar Hum Manzilen Na Ban Paaey
Manzilon Tak Ka Raasta Hojaen

Dair Se Soch Mai Hain Parwane
Raakh Hojaen Ya Hawa Ho Jaen

Ishq Bhi Khel Hay Naseebon Ka
Khaak Hojean Ya Keemiya Hojaen

Ab K Ger Tu Miley To Hum Tujhse
Aisey Liptein Teri Qaba Ho Jaen

Bandagi Hum Ne Chor Di Hay Faraz
Kia Karen Log Jab Khuda Hojaen.....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.