Thursday, 7 February 2013

Pin It

Widgets

Agar Kisi Se Marasim اگر کسی سے مراسم بڑھانے


اگر کسی سے مراسم بڑھانے لگتے ہیں
ترے فراق کے دُکھ یاد آنے لگتے ہیں

ہمیں ستم کا گلہ کیا،کہ یہ جہاں والے
کبھی کبھی ترا دل بھی دُکھانے لگتے ہیں

سفینے چھوڑ کے ساحل چلے تو ہیں لیکن
یہ دیکھنا ہی کہ اب کس ٹھکانے لگتے ہیں

پلک جھپکتے ہی دنیا اُجاڑ دیتی ہے
وہ بستیاں جنہیں بستے زمانے لگتے ہیں

فراز ملتے ہیں غم بھی نصیب والوں کو
ہر اِک کے ہاتھ کہاں یہ خزانے لگتے ہیں

Agar Kisi Se Marasim Barhane Lagte Hain
Tere Firaaq K Dukh Yaad Aanay Lagte Hain

Hame Sitam Ka Gila Kia ,K Yeh Jahan Waley
Kabhi Kabhi Tera Dil Bhi Dukhanay Lagte Hain

Safeenay Chor K Saahil Chaley Tou Hain Lekin
Yeh Dekhna Hai K Ab Kis Thikanay Lagte Hain

Palak Jhapakte He Dunya Ujaar Daiti Hai
Woh Bastiyan Jinheh Baste Zamane Lagte Hain

Faraz Milte Hain Gham Bhi Naseeb Walon Ko
Her Ak K Hath Kahan Yeh Khazany Lagte Hain…



 
Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.