Thursday, 7 February 2013

Pin It

Widgets

Be Sabab Udasi Th بے سبب اداسی تھی



us k chehre
بے سبب اداسی تھی
اب کے اُس کے چہرے پر
دُکھ تھا ۔۔۔۔ بے حواسی تھی
اب کے یوں ملا مجھ سے
یوں غزل سنی ۔۔۔۔۔ جیسے
میں بھی نا شناسا ہوں
وہ بھی اجنبی جیسے
زرد خال و خد اُس کے
سوگوار دامن تھا
اب کے اُس کے لہجے میں
کتنا کھردرا پن تھا
وہ کہ عمر بھر جس نے
شہر بھر کے لوگوں میں
مجھ کو ہم سخن جانا
خود سے مہرباں سمجھا
مجھ کو دلربا لکھا
اب کے سادہ کاغذ پر
سرخ روشنائی سے
اُس نے تلخ لہجے میں
میرے نام سے پہلے
صرف ” بے وفا “ لکھا
Be Sabab Udasi Thi
Ab K Us K Chehray Par
Dukh Tha Be Hawasi Thi
Ab K Yun Mila Mujh Se
Yun Ghazal Suni  Jese
Main Bhi Na Shanasa Hoon
Wo Bhi Ajnabi Jesey
Zard Khal-O-Khad Us K
Sogwaar Daman Tha
Ab K Us K Lehjay Main
Kitna Khurdara Pan Tha
Woh K Umar Bhar Jis Ne
Shehar Bhar K Logon Main
Mujh Ko Ham Sukhan Jana
Khud Se Meharbaa'n Samjha
Mujh Ko Dil Rubaa'n Likha
Ab K Sada Kagaz Par
Surkh Roshnai Se
Us Ne Talkh Lehjay Main
Mere Naam Se Pehlay
Sirf "Bewafa" Likha !!!!
  


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.