Wednesday, 20 February 2013

Pin It

Widgets

Dharkan Ko Teri Yaad Se دھڑکن کو تیری یاد سے



Chahat Agar Saza

دھڑکن کو تیری یاد سے تحریک مل رہی ہے
چاہت اگر سزا ہے، ہمیں ٹھیک مل رہی ہے

اس در سے جو بھی لوٹ کے آیا تو رو پڑا وہ
لگتا ہے آنسووں کی وہاں بھیک مل رہی ہے

ہم نے تو پل صراط کے بارے میں سن رکھا تھا
ہر راہ ، بال سے ہمیں باریک مل رہی ہے

شاید کسی بھی لمحے مقابل ہوں اس کی گلیاں
جو دور کی صدا تھی وہ نزدیک مل رہی ہے

جو جگمگا اٹھی تھی تجھے دیکھ کر خوشی سے
مدت سے راہ وہ ہمیں تاریک مل رہی ہے

Dharkan Ko Teri Yaad Se Tehreek Mil Rahi Hay
Chahat Agar Saza Hay, Hame Theek Mil Rahi Hay

Is Dard Se Jo Bhi Lot K Aaya Tou Ro Para Who
Lagta Hay Aansoun Ki Wahan Bheek Mil Rahi Hay

Hum Ne Tou Pul Siraat K Barey Men Sun Rakha Tha
Har Raah Baal Say Hamey Bareek Mil Rahi Hay

Shayad Kisi Bhi Lamhe Muqabil Hon Uski Galyaan
Jo Door Ki Sada Thi Woh Nazdeek Mil Rahi Hay

Jo Jagmaga Uthi Thi Tujhe Dekh Kar Khushi Say
Muddat Say Raah Who Hame Tareek Mil Rahi Hay…



 

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.