Thursday, 7 February 2013

Pin It

Widgets

Mansoob Thay Jo Log Meri منسوب تھے جو لوگ میری


be-rukhi k sath

.



منسوب تھے جو لوگ میری زندگی کےساتھ
 اکثر وہی ملے ہیں بڑی بے رُخی کے ساتھ

 یوں تو مَیں ہنس پڑا ہُوں تمہارے لیے مگر
 کتنے ستارے ٹوٹ پڑے اِک ہنسی کے ساتھ

 فرصت مِلے تو اپنا گریباں بھی دیکھ لے
 اے دوست یوں نہ کھیل میری بے بسی کے ساتھ

 مجبوریوں کی بات چلی ہے تو مئے کہاں
 ہم نے پِیا ہے زہر بھی اکثر خوشی کے ساتھ 

چہرے بدل بدل کے مجھے مل رہے ہیں لوگ 
اتنا بُرا سلوک میری سادگی کے ساتھ 

اِک سجدۂ خلوص کی قیمت فضائے خلد
 یاربّ نہ کر مذاق میری بندگی کے ساتھ

 محسن کرم بھی ہو جس میں خلوص بھی 
مجھ کو غضب کا پیار ہے اُس دشمنی کے ساتھ
 


Mansoob Thay Jo Log Meri Zindagi K Saath
Aksar Wohi Milay Hein Barri Be-Rukhi K Saath

 Yun To Main Hans Para Hoon Tumhare Liay
 Magar Kitne Sitaray Toot Pare Ek Hansi K Saath

Fursat Milay To Apna Girebaan Bhi Dekh Le
Ey Dost Yun Na Khail Meri Be-Basi K Saath

 Majboorion Ki Baat Chali Hai To Mai Kahan?
 Hum Ne Piya Hai Zehar Bhi Aksar Khushi K Saath

Chehray Badad Badal K Mujhe Mil Rahe Hein Log
Itna Bura Sulook Meri Saadgi K Saath...?

Ek Sajda Khuloos Ki Qeemat Fiza-e-Khuld?
Ya Rab, Na Kar Mazak Meri Bandagi K Sath

 Mohsin Karam Ki Leh Bhi Ho Jis Main Khuloos Bhi
 Muj Ko Ghazab Ka Piyar Hei Uss Dushmani K Saath…





Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It




Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.