Thursday, 28 February 2013

Pin It

Widgets

Musalsal Zalzaley Hen. مسلسل زلزلے ہیں چشمِ نم میں

Musalsal Zalzaley Hen


مسلسل زلزلے ہیں چشمِ نم میں
قیامت کروٹیں لیتی ہے غم میں

عقیدوں کے پہن کر پاک چھلّے
بھٹکتی پھر رہی ہوں میں حرم میں

سفر تھوڑا بھی ہم طے کر نہ پائے
ذرا سا فاصلہ تھا تم میں ہم میں

مرے گھر سے تری دہلیز تک تو
بجی تھیں پائلیں ہر ہر قدم میں

ابھی تک یاد ہے اس کی وجاہت
ملا تھا جو مجھے پچھلے جنم میں

ٹھٹھک جاتی ہوں اکثر لکھتے لکھتے
ابھر آتے ہیں دو نینا ں قلم میں


Musalsal Zalzaley Hen Chashm-e-Num Men
Qayamat Karwaten Leti Hay Gham Men

Aqeedon K Pehan Kar Paak Chhallay
Bhatakti Phir Rahi Hoon Men Haram Men

Safar Thora Bhi Hum Tay Kar Na Paey
Zara Sa Faasla Tha Tum Men Hum Men

Mere Ghar Se Teri Dehleez Tak Tou
Baji Thi Paailen Har Har Qadam Men

Abhi Tak Yaad Hay Us Ki Wajahat
Mila Tha Jo Mujhe Pichlay Janam Men…

Thithak Jati Hoon Ksar Likhte Likhte
Ubhar Aatya Hen Dou Naina Qalam Men…





Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.