Tuesday, 26 February 2013

Pin It

Widgets

Un K Junoo Men Aisay اُن کے جنو ں میں ایسے

Un K Junoo Men

اُن کے جنو ں میں ایسے گرفتار ہو گیۓ
ہر شخص ہی سے بر سرِ پیکار ہو گیۓ

بارش کا ڈر انھیں تھا جو اہل مکان تھے
مدُت سے ہم تو بے در و دیوار ہو گیۓ

خود اُن کی زندگی تو اندھیروں میں گمُ ہویٔ
دُ نیا میں روشنی کا جو مینار ہو گیۓ

خوابوں کے وہ قلعے جو تراشے تھے ذہن نے
آندھی کے زور سے وہی مسمار ہو گیۓ

جب رُک گیۓ تو وقت کی نبضیں بھی تھم گیںٔ
جو چل پڑے تو وقت کی رفتار ہو گیۓ

رفعتؔ ملی ہیں راہ میں دُشواریاں بہت
سچا ییؤ ں کے جب سے پرستار ہو گیۓ

Un K Junoo Men Aisay Giraftaar Hogaey
Har Shakhs He Say Bar-Sar-e-Paikaar Hogaey

Barish Ka Dar Nahi Tha Jo Ehl-e-Makaan Thay
Muddat Se Hum Tou Be-Dar-o-Diwaar Hogaey

Khud Unki Zindagi Tou Andheron Men Ghum Hui
Dunya Men Roshni Ka Jo Minaar Hogaey

Khuwabon K Woh Qilay Jo Tarashay Thay Zehan Ne
Aandhi K Zor Se Wohi Musmaar Hogaey

Jab Ruk Gaey Tou Waqt Ki Nabzein Bhi Tham Gaee
Jo Chal Parray Tou Waqt Ki Raftaar Hogaey

Riffat Mili Hen Raah Men Dushwariyan Bohat
Sachaeyon K Jab Se Parastaar Hogaey……….



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

 


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.