Saturday, 16 March 2013

Pin It

Widgets

Jeenay K Liye Dard Ka Samaan Bohat Hai



Dard Ka Samaan 

جینے کے لیے درد کا سامان بہت ہے
اب تک جو ہوا خیر سے نقصان بہت ہے

کچھ روز سے وہ آئے نہیں کوئ بہانے
کچھ روز سے دل اپنا پریشان بہت ہے

دنیا میں تو تم جانے دو سب شکوے شکایت
لڑنے کے لیئے حشر کا میدان بہت ہے

ہونے نہیں دیتا تیری یادوں سے یہ غافل
ہر زخم جگر ہم پہ مہربان بہت ہے

ملتے ہیں شب و روز سبھی لوگ شناسا
اک تجھ سے ملاقات کا ارمان بہت ہے

سمجھاؤں اسے کیسے کہ سمجھانا ہے مشکل
ہم دونوں میں یکجہتی کا فقدان بہت ہے

ہم پر بھی مہرباں ہیں بےکار مشاغل
ہم پر بھی تمناؤں کا احسان بہت ہے

صاحب ہے رقابت پہ کمربستہ زمانہ
اب دل کے اجڑنے کا امکان بہت ہے



Jeenay K Liye Dard Ka Samaan Bohat Hai
 Ab Tak Jo Hua Kahir Se Nuqsaan Bohat Hai

Kuch Roz Se Woh Aaey Nahi Koi Bahaney
Kuch Roz Se Dil Apna Pareshan Bohat Hai

Dunya Men Tou Tum Jane Do Sab Shikwe Shikayat
Larrnay K Lieyh Hashr Ka midaan Bohat Hai

Hone Nahi deta Teri Yaadon Se Yeh Gaafil
Har Zakhm-e-Jigar Hum Pe Meharbaan Bohat Hai

Milte Hen Shab-o-Roz Sabhi Log Shanasa
Ik tujh Se Mulaqat Ka Armaan Bohat Hai

Samjhaon Usay Kese K Samjhana Hai Mushkil
Hum Dono Men Yak-Jehti Ka Fuqdaan Bohat Hai

Hum Par Bhi Meharbaan Hai Bekaar Mashagil
Hum Par Bhi Tamannaon Ka Ehsaan Bohat hai

Sahib Hai Raqabat pe Kamar Basta Zamana
Ab Dil K Ujarnay Ka Imkaan Bohat Hai……..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It



Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

4 comments:

Thanks For Nice Comments.