Saturday, 2 March 2013

Pin It

Widgets

Mout Se Mukar Jaein

Mout Se Mukar


موت سے مُکر جائیں
زندگی سے ڈر جائیں

ہجر کے سمندر کو
آؤ پار کر جائیں

راستے یہ کہتے ہیں
اب تو اپنے گھر جائیں

اِک ذرا سی مُہلت ہو
دل کی بات کر جائیں

شہرِ عشق سے آخر
کیسے معتبر جائیں

وہ پلٹ کے دیکھے تو
رنگ سے بِکھر جائیں


Mout Se Mukar Jaein
Zindagi Se Dar Jaein

Hijr K Samndar Ko
Aao Paar Kar Jaein

Raastey Yeh Kehte Hen
Ab Tou Apne Ghar Jaein

Ik Zara Si Mohlat Ho
Dil Ki Baat Kar Jaein

Shehr-e-Ishq Se Aakhir
Kese Mo’tabar Jaein

Woh Palat K Dekhey Tou
Rung Se Bikhar Jaein…….


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.