Thursday, 21 March 2013

Pin It

Widgets

Neela Mera Wajood Gharri Bhar Men Kar Gaya


Mere Dil Men

نیلا میرا وجود گھڑی بھر میں کر گیا
وہ زہر کی طرح مرے دل میں اتر گیا

پلکیں لرز کے رہ گئیں اور دیپ بجھ گئے
الزام اب کے بار بھی آندھی کے سر گیا

اب کس لئے سنبھال کے رکھوں بصارتیں
آنکھوں سے خواب چھین کے جب خواب گر، گیا

اس سے بچھڑ کے دل کا ہوا ہے عجیب حال
پانے کی آرزو گئی، کھونے کا ڈر گیا

جب موسموں نے پھر سے بغاوت کی ٹھان لی
ٹہنی پہ پھول کھلنے سے پہلے بکھر گیا

بہتر ہے خود رفو گری سیکھوں کہ آج تو
گھاؤ کھلے ہی چھوڑ کے وہ چارہ گر گیا

اس پر یقیں بحال ہوا تو وہ ایک دم
اقرار کے مقام پہ آ کر مُکر گیا

آنکھوں سے نیند، دل سے سکوں ہو گیا جدا
لگتا ہے اپنے ساتھ کوئی ہاتھ کر گیا

سورج نے ساتھ چھوڑا تو دیکھا پلٹ کے تب
سوچا، جو ساتھ چلتا تھا سایہ کدھر گیا
Neela Mera Wajood Gharri Bhar Men Kar Gaya
Woh Zehar Ki Tarha Mere Dil Men Utar Gaya,

Palkein Larz K Reh Gaee Aur Deep Bujh Gaey
ILzaam Ab K Baar Bhi Aandhi K Sar Gaya

Ab Kis Liyeh Sanbhaal K Rakhon Basaratein
Aankhon Se Khuwab Cheen K Jab Khuwab-Gar Gaya

Us Se Bichar K Dil Ka Hua Hai Ajeeb Haal
Paney Ki Aarzoo Gaee, Khone Ka Dar Gaya

Jab Mosamo’n Ne Phir Se Bagawat Ki Than Li
Tehni Pay Phool Khilne Se Pehle Bikhar Gaya

Behtar Hai Khud Rafu-Gari Seekhon K Aaj Tou
Ghaao Khulay He Chor Kar, Woh  Chara-Gar Gaya

Us Par Yaqeen Bahaal Hua Tou Woh Aik Dum
Iqraar K Muqaam Par Aakar Mukar Gaya

Aankhon Se Neend, Dil Se Sukoon Ho Gaya Juda
Lagta Hai Apne Sath Koi Haath Kar Gaya

Sooraj ne Hath Chora Tou Dekha Palat K Tab
Socha Jo Sath Chalta Tha, Saya Kidhar Gaya…..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It









Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.