Saturday, 23 March 2013

Pin It

Widgets

Tera Lehja Badalta Ja Raha Hai

Dil Sanbhalta Ja Raha


تیررا لہجہ بدلتا جا رہا ہے
مگر اب دل سنبھلتا  جا رہا ہے

میرے سامان میں رکھی ہیں یادیں
سفر خشبو میں ڈھلتا جا رہا ہے

دئے اس آنکھ میں جلنے لگے ہیں
میرا چہرا پگھلتا جا رہا ہے

کنارے اب تلک تشنہ ہیں لیکن
یہ دریا رخ بدلتا جا رہا ہے

تیر اس شہر میں خود کو گنوا کے
مسافر ہاتھ ملتا  جا رہا ہے

اگر چہ روز موسم بگڑتا ہے
یہ جنگل روز جلتا جا رہا ہے۔۔۔۔۔


Tera Lehja Badalta Ja Raha Hai
Mager Ab Dil Sanbhalta Ja Raha Hai

Mere Samaan Mein Rakhi Hain Yadein,
Safar Khushboo Mein Dhalta Ja Raha Hai

Diye Is Aankh Mein Jalne Lage Hain
Mera Chehra Pighalta Ja Raha Hai

Kinare Ab Talak Tishna Hain Lekin
Yeh Darya Rukh Badalta Ja Raha Hai

Tere Iss Shehar Mein Khud Ko Ganwa K
Musafir Hath Malta Ja Raha Hai

Agar Chay Roz Mosam Bigarta Hai
Yeh Jungle Roz Jalta Ja Raha Hai....



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.