Saturday, 30 March 2013

Pin It

Widgets

Zindagi Dard Bhi, Dawa Bhi Thi


Dawa Bhi Thi

زندگی درد بھی ، دوا بھی تھی
ہمسفر بھی گریز پا بھی تھی

کچھ تو تھے دوست بھی وفا دشمن
کچھ میری آنکھ میں حیا بھی تھی

دن کا اپنا بھی شور تھا لیکن
شب کی آواز بھی سدا بھی تھی

عشق نے ہم کو غالب دان کیا
یہی تحفہ ، یہی سزا بھی تھی

گردباد وفا سے پہلے تک
سر پہ خیمہ بھی تھا ردا بھی تھی

ماں کی آنکھیں چراغ تھیں جس میں
میرے ہمراہ وہ دعا بھی تھی

کچھ تو تھی رہگزر میں شمع طلب
اور کچھ تیز وہ ہوا بھی تھی

بے وفا تو وہ خیر تھا امجد
لیکن اس میں کہیں وفا بھی تھی

Zindagi Dard Bhi Dawa Bhi Thi
Humsafar Bhi Gharaiz-Paa Bhi Thi

Kuch Tou Thay Dost Bhi Wafa Dushman
Kuch  Meri  Aankh Men Haya  Bhi Thi

Din Ka Apna Bhi Shor Tha Lekin
Shab Ki Aawaaz Bhi Sada Bhi Thi

Ishq Ne Hum Ko Ghalib Daan Kia
Yehi Tohfa , Yehi  Saza  Bhi  thi

Ghard-e-Baad  Wafa Se Pehle Tak
Sar Pay Khaima Bhi Tha, Rida Bhi Thi

Maa Ki Aankhen Charagh Thi Jis Men
Mere Hum-Raah Woh Duaa Bhi Thi

Kuch Tou Thi Rehguzar Men Shamma Talab
Aur Kuch Taiz Woh Hawa Bhi Thi

Bewafa Tou Woh Khair Tha Amjad
Lekin Us Men Kaheen Wafa Bhi Thi….


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It



Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.