Wednesday, 24 April 2013

Pin It

Widgets

Khuwahishon K Aangan Mein Raat Din Basairay Thay


Raat Din Basairay

خواہشوں کے آنگن میں رات دن بسیرے تھے
تتلیاں تماری تھی اور پھول میرے تھے

چاند آسماں سے جب زمیں پر اترا تھا
دیکھنے میں راتیں تھی اصل میں سویرے تھے

تیرے پاس بسنے کی کھائی تھی قسم لیکن
شہر بھی پرایا تھا لوگ بھی لٹیرے تھے

لٹ گے ھم دونوں تو قصور کس کا ھے
خواہشیں بھی تیری تھی فیصلے بھی تیرے تھے

Khuwahishon K Aangan Mein Raat Din Basairay Thay
Titliyaan Tumhari Thee’n  Aur Phool Mere Thay

Chand Asmanon Se Jab Zameen Pe Utra Tha
Dekhnay Mein Ratein Thee’n , Asal Mein Sawairay Thay

Tere Paas Basnay Ki Khai Thi Qasam Lekin
Shehar Bhi Paraya Tha , Log Bhi Luteray Thay

Lut Gaye Hum Dono Tou Qasoor Kis Ka Hai ???
Khuwahishen Bhi Teri Thee’n Faislay Bhi Tere Thay....


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.