Sunday, 5 May 2013

Pin It

Widgets

Kahaniyan Na Suno Aas Paas Logon Ki,,,,,,,,,,,,,

Udas Logon Ki

کہانیاں نہ سنو آس پاس لوگوں کی
کہ میرا شہر ھے بستی اداس لوگوں کی

نہ کوئی سمت نہ منزل سو قافلہ کیسا
رواں ھے بھیڑ فقط بے قیاس لوگوں کی

کسی سے پوچھ ہی لیتے وفا کے باب میں ہم
کمی نہیں تھی زمانہ شناس لوگوں کی

محبتوں کا سفر ختم تو نہیں ہوتا
بجا کہ دوستی آئی نہ راس لوگوں کی

ہمیں بھی اپنے کئی دوست یاد آتے ہیں
کبھی جو بات چلے ناسپاس لوگوں کی

کرو نہ اپنی بلا نوشیوں کے یوں چرچے
کہ اس سے اور بھی بڑھتی ھے پیاس لوگوں کی

میں آنے والے زمانوں سے ڈر رہا ہوں فراز
کہ میں نے دیکھی ہیں آنکھیں اداس لوگوں


Kahaniyaan Na Suno , Aas Paas Logon Ki
K Mera Shehar Hai , Basti Udaas Logon Ki

Na Koi Simt , Na Manzil , Tou Qaafla Kaisa
Rawaan Hai Bheer Faqat , Be-Qayaas Logon Ki

Kisi Se Pooch He Letay, Wafa K Baab Mein Hum
Kami Nahi Thi , Zamana Shanaas Logon Ki

Mohabbaton Ka Safar Khatm Tou Nahi Hota
Baja K Dosti ,  Aaie Na Raas Logon Ki

Hame Bhi Apne, Kai Dost Yaad Aatay Hein
Kabhi Jo Baat Chalay, Naas-Paas Logon Ki

Karo Na Apni Bala Noshiyon K Yun Charchay
K Is Se Aur Bhi Barhti Hai Piyaas Logon Ki

Mein Aanay Walay Zamano Se Dar Raha Hoon Faraz
K Mein Ne Dekhi Hein Aankhein Udaas Logon Ki.......


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.