Monday, 13 May 2013

Pin It

Widgets

Khushbu Ki Tarha Aaya , Woh Taiz Hawaon Mein,,,,,,.......

Woh Taiz Hawaon Mein

خوشبو کی طرح آیا وہ تیز ھواؤں میں
مانگا تھے جسے دن رات دعاؤں میں

تم چھت پر نہیں آئے میں گھر سے نہیں نکلا
یہ چاند بہت بھٹکا ساون کی گھٹاؤں میں

اس شہر میں اک لڑکی بالکل ھے غزل جیسی
بجلی سی گھٹاؤں میں خوشبو سی ھواؤں میں

موسم کا اشارہ ھے خوش رہنے دو بچوں کو
معصوم محبت ھے پھولوں کی خطاؤں میں

ھم چاند ستاروں کی راھوں کے مسافر ھیں
ھر رات چھمکتے ھیں تاریک خلاؤں میں

بھگوان ھی بھیجیں گے چاول سے بھری تھالی
مظلوم پرندوں کی معصوم سبھاؤں میں

دادا بڑے بھولے تھے سب سے یہی کہتے تھے
کچھ زہر بھی ھوتا ھے انگریزی دواؤں میں


Khushbu ki Tarha Aaya, Woh Taiz Hawaon Mein
Manga Tha Jisay, Din Raat Duao’n Mein

Tum Chhat Par Nahi Aaey, Mein Ghar Se Nahi Nikla
Yeh Chaand Bohat Bhatka, Sawan Ki Ghatao’n Mein

Is Shehar Mein Ik Larki, Bilkul Hai Ghazal Jesi
Biji Si Ghataon Mein, Khushbu Si Hawao’n Mein

Mosam Ka Ishara Hai, Khush rehne Do Bachon Ko
Masoom Mohabbat Hai, phoolon Ki Khatao’n Mein

Hum Chaand Sitaron Ki Raahon K Musafir Hein
Har Raat Chamakte Hein, Tareek Khalao’n Mein

Bhagwaan He Bhaijen Gay, Chawal Se Bhari Thali
Mazloom Parindon Ki , Masoom Sabhao’n Mein

Dada Barray Bholay Thay, Sab Se Yehi Kehte Thay
Kuch Zehar Bhi Hota hai, Angraizi Dawao’n Mein.....



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.