Sunday, 30 June 2013

Pin It

Widgets

Dil Par Jo Zakhm Hein Woh Dikhaen Kisi Ko Kia


Yaad Jo Aaen

دل پر جو زخم ہیں وہ دکھائیں کسی کو کیا
 اپنا  شریکِ درد  بنائیں کسی کو کیا

 ہر شخص اپنے اپنے غموں میں ہے مبتلا
 زنداں میں اپنے ساتھ رلائیں کسی کو کیا

 بچھڑے ہوئے وہ یار وہ چھوڑے ہوئے دیار
 رہ رہ کے ہم کو یاد جو آئیں کسی کو کیا

 رونے کو اپنے حال پہ تنہائی ہے بہت
 اس انجمن میں خود پہ ہنسائیں کسی کو کیا

 وہ بات چھیڑ جس سے جھلکتا ہو سب کا غم
 یادیں کسی کی تجھ کو ستائیں کسی کو کیا

 سوئے ہوئے ہیں لوگ تو ہوں گے سکون سے
 ہم جاگنے کا روگ لگائیں کسی کو کیا

 جالب نہ آئے گا کوئی احوال پوچھنے
... دیں شہرِ بے حساں میں صدائیں کسی کو کیا



Dil Par Jo Zakhm Hein Woh Dikhaen Kisi Ko Kia
Apna Shareek-e-Dard Banaen Kisi Ko Kia

Har Shakhs Apne Apne Ghamon Mein Hai Mubtila
Zindaan Mein Apne Sath Rulaen Kisi Ko Kia

Bichray Huey Woh Yaar, Woh Choray Huey Dayaar
Reh Reh K Humko Yaad Jo Aaen Kisi Ko Kia

Ronay Ko APne Haal Pay Tanhai Hai Bohat
Is Anjuman Mein Khud Pay Hansaen Kisi Ko Kia

Woh Baat Chairr Jis Se Jhalakta Ho Sab Ka Gham
Yaadein Kisi Ko Tujhko Sunaen Kisi Ko Kia

Soey Huey Hein Log Tou Hongay Sukoon Say
Hum Jaagne Ka Rog Lagaen Kisi Ko Kia

Jalib Na Aaega Koi Ehwaal Poochne
Dein Shehr-e-Be-Sada Mein Sadaein Kisi Ko Kia..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.