Thursday, 20 June 2013

Pin It

Widgets

Jo Din Guzar Gaey Hein Tere Iltafaat Mein


Ghata Doon Hayaat

جو دن گزر گئے ہیں ترے التفات میں
میں ان کو جوڑ لوں کہ گھٹا دوں حیات میں

کچھ میں ہی جانتا ہوں جو مجھ پر گزر گئی
دنیا تو لطف لے گی مرے واقعات میں

میرا تو جرم تذکرہ عام ہے مگر
کچھ دھجیاں ہیں میری زلیخا کے ہاتھ میں

آخر تمام عمر کی وسعت سما گئی
اک لمحۂ گزشتہ کی چھوٹی سے بات میں

اے دل ذرا سی جرأت رندی سے کام لے
کتنے چراغ ٹوٹ گئے احتیاط میں



Jo Din Guzar Gaey Hein tere Iltafaat Mein
Mein Inko Jorr Loon K Ghata Doon Hayaat Mein

Kuch Mein He Janta Hoon Jo Mujh Par Guzar Gaie
Dunya Tou Lutf Lay Gi Mere Waaqeaat Mein

Mera Tou Jurm Tazkarah Aam Hai Magar
Kuch Dhajjiyan Hein Meri ZUlekha K Hath Mein

Aakhir Tamaam Umr Ki Wus’at Sama Gaie
Ik Lamh-e-Guzishta Ki Choti Si Baat Mein

Ay Dil Zara Si Jurrat Randi Se Kaam Lay
Kitne Charaag Toot Gaey Ehtiyaat Mein..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.