Saturday, 22 June 2013

Pin It

Widgets

Mein K Pur-Shor Samandar Thay Mere Paon Mein..

Samandar Thay Mere

میں کہ پر شور سمندر تھے مرے پاؤں میں
اب کہ ڈوبا ہوں تو سوکھے ہوئے دریاؤں میں

نامرادی کا یہ عالم ہے کہ اب یاد نہیں
تو بھی شامل تھا کبھی میری تمناؤں میں

دن کے ڈھلتے ہی اُجڑ جاتی ہیں آنکھیں ایسے
جس طرح شام کو بازار کسی گاؤں میں

چاک دل سی کہ نہ سی زخم کی توہین نہ کر
ایسے قاتل تو نہ تھے میرے مسیحاؤں میں

ذکر اُس غیرتِ مریم کا جب آتا ہے فراز
..گھنٹیاں بجتی ہیں لفظوں کے کلیساؤں میں


Mein K Pur-Shor Samandar Thay Mere Paon Mein
Ab K Dooba Hoon Tou Sookhay Huey Daryaaon Mein

Na Muradi Ka Yeh Aalam Hai K Ab Yaad Nahi
Tu Bhi Shamil Tha Kabhi Meri Tamannaon Mein

Din K Dhaltay He Ujar Jati Hein Aankhen Aisay
Jis Tarha Shaam Ko Baazaar Kisi Gaaon Mein

Chaak-e-Dil See K Na See, Zakhm Ki Touheen Na Kar
Aisay Qatil Tou Na Thay Mere Masihaoun Mein

Zikr Us Gairat-e-Maryam K Jab Aata Hai faraz
Ghantiyaan Bajti Hein Lafzon K Kalisaaoun Mein…


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.