Monday, 3 June 2013

Pin It

Widgets

Mumkin Ho Apse Tou Bhula Dijiye Mujhe.....

Bhula Dijiyeh Mujhe

ممکن ہو آپ سے تو بُھلا دیجئے مجھے
پتھر پے ہُوں لكير مِٹا دیجیۓ مجھے

ہر روز مُجھ سے تازہ شکایت ہے آپکو
میں کیا ہوں" ایک بار بتا دیجیۓ مجھے

میرے سِوا بھی ہے کوئی موضوعِ گُفتگو؟
اپنا بهى کوئی رنگ دِکھا دیجیۓ مجھے

میں کیا ہوں؟کِس جگه ہوں؟ مجھے کچھ خبر نہیں
ہیں آپ کتنی دور ، صدا دیجیۓ مجھے،

كى مینے اپنے زخم کی تشہیر جا بجا
میں مانتا ہوں جرم، سزا دیجیۓ مجھے

قائم تو ہو سکے کوئی رشتہ ہی آپ سے
گہرے سمندروں میں بہا دیجیۓ مجھے

شب بهر كِرن كِرن كو ترسنے سے فائدہ ؟
ہے تِیرگی تو آگ لگا دیجیۓ مجھے

جلتے دنوں میں خود پسِ ديوار بیٹھ کر
ساۓ کی جستجو میں لگا دیجیۓ مجھے

یوں تو کب سے شُعلهٓ جان سرد هو چُكا
ليكِن سُلگ اُٹھے تو ہوا دیجیۓ مجھے

Mumkin Ho Apse Tou Bhula Dijiye Mujhe
Pathar Pay Hoon Lakeer Mita Dijiye Mujhe

Har Roz Mujhse Taza Shikayat Hai Apko
Mein Kia Hoon Aik Baar Bata Dijiye Mujhe

Mere Siwa Bhi Hai Koi Mozo-e-Guftagoo ?
Apna Bhi Koi Rung Dikha Dijiye Mujhe

Mein Kia Hoon? Kis Jaga Hoon, Mujhe Kuch Khabar Nahi
Hein Aap Kitni Door , Sada Dijiye Mujhe

Ki Mein Ne Apne Zakhm Ki Tash’heer Ja Baja
Mein Maanta Hoon Jurm Saza Dijiye Mujhe

Qayam Tou Ho Sakey Koi Rishta He Aap Se
Gehray Samandaron Mein Baha Dijiye Mujhe

Shab Bhar Kiran Kiaran Ko Tarasne Se Faieda
Hai Teergi Tou Aag Laga Dijiye Mujhe

Jaltey Dino Main Khud Pas-e-Diwaar Baith Kar
Saey Ki Justaju Mein Laga Dijiye Mujhe

Yun Tou Kab Se Shula-e-Jaan Sard Ho Chuka
Lekin Sulag Uthay Tou Hawa Dijiye Mujhe,,...



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

   
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.