Monday, 24 June 2013

Pin It

Widgets

Patton Ki Tarha Shaakh Pay Marna Parra Mujhe..

Sajid Poetry

پتّوں کی طرح شاخ  پہ مرنا  پڑا مجھے
موسم کے ساتھ ساتھ گزرنا پڑا مجھے

اک شخص کے سلوک کی سب کو سزا ملی
ساری محبتوں سے مکرنا پڑا مجھے

اُس سے بچھڑ کے زندگی آسان تو نہیں
پھر بھی یہ تلخ فیصلہ کرنا پڑا مجھے

کچھ دن تو میں چٹان کی صورت ڈٹی رہی
پھر ریزہ ریزہ ہو کے بکھرنا پڑا مجھے

آساں نہیں تھا ٹوٹتی سانسوں کو جوڑنا
اس سلسلے میں جاں سے گزرنا پڑا مجھے

ویسے میں اپنے آپ سے ناراص تھی قمر
اس نے کہا تو بننا سنورنا پڑا مجھے


Patton Ki Tarha Shaakh Pay Marna Parra Mujhe
Mosam K Sath Sath Guzarna Parra Mujhe

Ik Shakhs K Sulooq Ki Sab Ko Saza Mili
Sari Mohabbaton Se Mukarna Parra Mujhe

Us Se Bichar Kar Zindagi Aasaan Tou Nahi
Phir Bhi Yeh Talkh Faisla Karna Parra Mujhe

Kuch Din Tou Mein Chataan Ki Soorat Dati Rahi
Phir Raiza Raiza Ho K Bikharna Parra Mujhe

Aasaan Nahi Tha Toot’ti Saanson Ko Jorna
Is Silsilay Mein Jaan Se Guzarna Parra Mujhe

Wese Mein Apne Aap Se Naraz Thi Qamar
Us Ne Kaha Tou Banna Sanwarna Parra Mujhe….



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

2 comments:

Thanks For Nice Comments.