Saturday, 1 June 2013

Pin It

Widgets

Umr Bhar Ka Maan Toota Aur Kia

Sath Choota Aur Kia

عمر بھر کا مان ٹوٹا اور کیا
موڑ آیا ساتھ چُھوٹا اور کیا

کون سچ کہتا ہے سچ سنتا ہے کون
میں بھی جُھوٹا تُو بھی جُھوٹا اور کیا

جان سے جانا ضروری تو نہیں
عاشقی میں سر تو پُھوٹا اور کیا

ہوتے ہوتےلعل پتھر ہو گئے
رفتہ رفتہ رنگ چُھوٹا اور کیا

رہ گیا تھا یاد کا رشتہ فقط
آخرش یہ پُل بھی ٹُوٹا اور کیا

اُس کی آنکھیں بھی کبھی سچ بولتیں
دل تو تھا جھوٹوں سا جھوٹا اور کیا

غیر تو تھے غیر، اپنے آپ کو
سب سے بڑھ کر ہم نے لُوٹا اور کیا

اس قدر کافی تھی یادِ کربلا
روئے دھوئے سینہ کوٹا اور کیا

آؤ دیکھو تو ذرا باغِ وفا
اب کوئی گل ہے نہ بوٹا اور کیا

فتنہ سامانی میں یکساں ہیں فرازؔ
اپنا دل ہو یا کہوٹا اور کیا

Umr Bhar Ka Maan Toota Aur Kia
Morr Aaya Sath Choota Aur Kia

Kon Such Kehta Hai, Such Sunta Hai Kon
Mein Bhi Jhoota Tu Bhi Jhoota Aur Kia

Jaan Se Jana Zaroori Tou Nahi
Aashqi Mein Sar Tou Phoota Aur Kia

Hotay Hotay Laal Pathar Hogaey
Rafta Rafta Rung Choota Aur Kia

Reh Gaya Tha Yaad Ka Rishta Faqat
Akhrash Yeh Pull Bhi Toota Aur Kia

Uski Aankhein Bhi Kabhi Such Bolti
Dil Tou Tha Jhooton Sa Jhoota Aur Kia

Gair Tou Thay Gair , Apne Aap Ko
Sab Se Barh Kar Hum Ne Loota Aur Kia

Is Qadar Kafi Thi  Yad-e-Karbala
Roey Dhoey Seena Koota Aur Kia

Aao Dekho Tou Zara Baagh-e-Wafa
Ab Koi Gul Hai Na Boota Aur Kia

Fitna Samani Mein Yaksaan Hai Faraz
Apna Dil Ho Ya Kahoota Aur Kia,.......




Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It


 
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.