Wednesday, 26 June 2013

Pin It

Widgets

Us Ne Kaha , Hum Aaj Se Dildaar Ho Gaye..


Sarey He Log

اُس نے کہا ، ہم  آج   سے دلدار  ہو گئے
 سب لوگ اُس کے دل کے طلبگار ہو گئے

 اُس نے کہا کہ ایک حسیں چاہیے مجھے
 سارے  ہی  لوگ  زینتِ بازار  ہو گئے

 اُس نے کہا کہ صاحبِ کردار ہے کوئی
 اِک پل میں لوگ صاحبِ کردار  ہو گئے

 اُس نے کہا  کہ مجھے مِری تعمیر  چاہیے
 جو خشت وسنگ بار تھے ، معمار ہو گئے

 اُس نے کہا، یہاں پہ کوئی باخبر بھی ہے
 جو بے خبر تھے وہ بھی خبردار ہو گئے

 اُس نے کہا  کہ  طالبِ دیدار  ہے  کوئی
 اندھے بھی اُس کے طالب دیدار ہو گئے

 اُس نے کہا، کسی کو مرا وصل  چاہیے
 اِنکار  کے حرُوف  بھی اِقرار ہو گئے

 اُس نے کہا کہ قافلۂ سالار ہے کوئی
 سارے ہی لوگ قافلۂ سالار ہو گئے

 اُس نے کہا ، ذرا  سا مجھے حُسن چاہیے
 سارے  ہی شہر ،حسن  کے  بازار ہو گئے

 اُس  نے  کہا  کہ  تیزیٴ رفتار ہے کہیں
 ...کچھوے ، عدیم  صاحب  رفتار  ہو گئے

Us Ne Kaha , Hum Aaj Se Dildaar Ho Gaey
Sab Log Us K Dil K Talabgaar Ho Gaey

Us Ne Kaha K K Aik Haseen Chaheye Mujhe
Saray He Log Zeenat-E-Bazaar Ho Gaey

Us Ne Kaha K Sahib-E-Kirdaar Hai Koi
Ik Pal Mein Log Sahb-E-Kirdaar Ho Gaey

Us Ne Kaha K Mujhe Meri  Tameer Chaheye
Jo Khasht-O-Sang-E-Baar Thay, Memaar Ho Gaey

Us Ne Kaha, Yahan Pay Koi Bakhabar Bhi Hai
Jo Be-Khabar Thay Woh Bhi Khabardaar Ho Gaey

Us Ne Kaha K Talib-E-Didaar Hai Koi
Andhay Bhi Usk Talibe-Deedaar Ho Gaye

Us Ne Kaha, Kisi Ko Mera Visl Chaheye
Inkaar K Huroof Bhi Iqrar Ho Gaey

Us Ne Kaha K Qaafla Salaar Hai Koi
Sarey He Log Qaafla Salaar Ho Gaey

Us Ne Kaha , K Zara Sa Mujhe Husn Chaheye
Sarey He Shehar Husn K Bazaar Ho Gaey

Us Ne Kaha K Taizey-e-Raftaar Hai Kaheen
Kachhway , Aadeem Sahib-E-Raftaar Ho Gaey…



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.