Tuesday, 9 July 2013

Pin It

Widgets

Apni Masti , K Tere Qurb Ki Sarshaari Mein...

Kitni Zakhaiz Hai Nafrat

اپنی مستی، کہ ترے قرب کی سرشاری میں
اب میں کچھ اور بھی آسان ہوں دشواری میں

کتنی زرخیز ہے نفرت کے لیے دل کی زمیں
وقت  لگتا  ہی  نہیں  فصل کی  تیاری  میں

اک تعلق کو بکھرنے سے بچانے کے لیے
میرے دن رات  گزرتے ہیں  اداکاری  میں

وہ کسی اور دوا سے مرا کرتا ہے علاج
مبتلا ہوں میں کسی اور ہی بیماری میں

اے زمانے میں ترے اشک بھی رو لوں گا ، مگر
ابھی  مصروف  ہوں خود  اپنی  عزاداری  میں

اس کے کمرے سے اٹھا لایا ہوں یادیں اپنی
خود  پڑا  رہ  گیا  لیکن  کسی  الماری میں

اپنی تعمیر اٹھاتے تو کوئی بات بھی تھی
تم نے اک عمر گنوادی مری مسماری میں

ہم  اگر اور نہ کچھ  دیر ہوا دیں ، تو  یہ آگ
سانس گھٹنے سے ہی مر جائے گی چنگاری میں

تم بھی دنیا کے نکالے ہوئے لگتے ہو ظہیر
  ...... میں بھی رہتا ہوں یہیں ، دل کی عملداری میں

Apni Masti K Tere Qurb Ki Sarshari Mein
Ab Mein Kuch Or Bhi Aasan Hoon Dushwari Mein

Kitni Zarkhaiz Hai Nafrat K Liyeh Dil Ki Zameen
Waqt Lagta He Nahi Fasl Ki Tayyari Mein
               
Ik Ta’alluq Ko Bikharne Se Bachane K Liyeh
Mere Din Raat Guzarte Hein Adakari Mein

Woh Kisi Aur Dawa Se Mera Karta Hai Elaaj
Mubtila Hoon Mein Kisi Or He Bimari Mein

Ay Zamane Mein Tere Ashk Bhi Ro Loonga Magar
Abhi Masroof Hoon KHud apni Azadaari Mein

Us K Kamre Se Utha Laya Hoon Yadein APni
Khud Parra Reh Gaya Lekin Kisi Almaari Mein

Apni Tameer Uthatay Tou Koi Baat Bhi Thi
Tum Ne Ik Umr Ganwadi Meri Masmaari Mein

Hum Agar Aur Na Kuch Dair Hawa Dein Tou Yeh Aag
Saans Ghutne Se He Mar Jaegi Chingaari Mein

Tum Bhi Dunya K Nikaly Huey Lagte Ho Zaheer
Mein Rehta Hoon Yaheen Dil Ki Amaldari Mein ….


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.