Monday, 15 July 2013

Pin It

Widgets

Hum Gila Nahi Karte.........

Unki Sard Mohri Ka

سرد مھر لوگوں سے
ان کی سرد مہری کا
ہم گلہ نہیں کرتے

تیر جو زباں کے ہیں
گر کسی کو لگ جاٰئیں
درد سا کیوں ہوتا ہے
زخم ان کی باتوں کے
کیوں سلا نہیں کرتے

پتھروں کی دنیا میں
لوگ بھی ہیں پتھر کے
لاکھ زلزلے آئیں
  ........... وہ ہلا نہیں کرتے

Sard Mohar Logon Se
Unki Sard Mohri Ka
Hum Gila Nahi Karte

Teer Jo Zubaan K Hein
Gar Kisi Ko Lag Jaen
Dard Sa Kiun Hota Hai
Zakhm Inki Baton K
Kiun Sila Nahi Karte

Patharon Ki Dunya Mein
Log Bhi Hein Pathar K
Laakh Zalzalay Aaen
Woh Hila Nahi Karte……..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It


Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.