Monday, 8 July 2013

Pin It

Widgets

Laakh Masmaar Kiye Jaen Zamane Waley...

Naya Shehr Basane

لاکھ مسمار کیے جائیں زمانے والے
آہی جاتے ہیں نیا شہر بسانے والے

اس کی زد پر وہ کبھی خود بھی تو آسکتے ہیں
یہ کہاں جانتے ہیں آگ لگانے والے

اب تو ساون میں بھی بارود برستا ہے
اب وہ موسم نہیں بارش میں نہانے والے

سر سے جاتا ہی نہیں‌وعدہء فروا کا جنوں
مر گئے عدل کی زنجیر ہلانے والے

ہم نہ کہتے تھے تجھے، وقت بہت ظالم ہے
کیا ہوئے اب وہ ترے ناز اٹھانے والے

سائے میں بیٹھی ہوئی نسل کو معلوم نہیں‌
دُھوپ کی نذر ہوئے پیٹر لگانے والے

گھر میں دیواریں ہیں اور صحن میں آنکھیں ہیں‌سلیم
...........اتنے آزاد نہیں وعدہ نبھانے والے

Laakh Masmaar Kiye Jaen  Zamane Wale
Aa He Jatey Hein Naya Shehar Basane Wale

Iski Zad Par Woh Kabhi Khud Bhi Tou Aa Sakte Hein
Yeh Kahan Jantey Hein  , Aag Laganay Waley

Ab Tou Sawan Mein Bhi Barood Barasta Hai
Ab Woh Mo0sam Nahi Barish Mein Nahane Waley

Sar Se Jata He Nahi Wada-e-Farwa Ka Junoo
Mar Gaey Adal Ki Zanjeer Hilaney Waley

Hum Ne Kehte Thay Tujhe Waqt Bohat Zalim Hai
Kia Huey, Ab Woh Tere Naaz Uthaney Waley

Saey Mein Bethi Hui Nasal Ko Maloom Nahi
Dhoop Ki Nazar Huey Pairr Laganey Waley

Ghar Mein Diwarein Hein Or Sehan Mein Aanklhein Hein Saleem
Itnay Aazaad Nahi Wada Nibhane Waley………..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.