Saturday, 20 July 2013

Pin It

Widgets

Sar Taak-e-Jaan Na Charaag Hai , Pas-e-Bam-e-Shab Na Sehar Koi .. ..

Tujhe Kia Khabar

سرِ طاقِ جاں نہ چراغ ہے ، پسِ بامِ شب نہ سحر کوئی
عجب ایک عرصہِ درد ہے ، نہ گمان ہے نہ خبر کوئی

نہیں اب تو کوئی ملال بھی ، کسی واپسی کا خیال بھی
غمِ بے کسی نے مٹادیا مرے دل میں تھا بھی اگر کوئی

تجھے کیا خبر ہے کہ رات بھر تجھے دیکھ پانے کو اِک نظر
رہا  ساتھ  چاند  کے  منتظ ر تری  کھڑکیوں  سے اُدھر کوئی

سرِ شاخِ جاں  ترے  نام  کا  عجب  ایک  تازہ گلاب  تھا
جسے آندھیوں سے خطر نہ تھا جسے تھا خزاں کا نہ ڈر کوئی

تری بے رُخی کے دیار میں ، گھنی تیرگی کے حصار میں
جلے کس طرح سے چراغِ جاں , کرے کس طرف کو سفر کوئی

کٹے وقت چاہے عذاب میں، کِسی خواب میں یا سراب میں
جو  نظر سے  دُور  نکل گیا ، اُسے  یاد  کرتا ہے ہر کوئی

سرِ بزم جتنے چراغ تھے  وہ تمام رمز شناس  تھے
 ..  .. تری چشمِ خوش کے لحاظ سے نہیں بولتا تھا مگر کوئی

Sar Taak-e-Jaan Na Charaag Hai , Pas-e-Bam-e-Shab Na Sehar Koi
Ajab Aik Arsa-e-Dard Hai , Na Gumaan Hai Na Khabar Koi

Nahi Ab Tou Koi Malaal Bhi , Kisi Wapsi ka Khayal Bhi
Gham-e-Baikasi Ne Mita Diya  , Mere Dil Mein Tha Bhi Agar Koi

Tujhe Kia Khabar Hai K Raat Bhar Tujhe Dekh Pane Ko Ik Nazar
Raha Sath Chaand K Muntazir Teri Khirrkiyon Se Udhar Koi

Sar-e- Shaakh Jaan Tere Naam Ka Ajab Aik Taza Gulaab Tha
Jisay Aandhiyon Se Khatar Na Tha , Jisay Tha Khizaan Ka Na Dar Koi

Teri Berukhi K Dayaar Mein ,  Ghani Teergi K Hisaar Mein
Jalay Kis Tarha Se Charag-e-Jaan, Kare Kis Taraf Ko Safar Koi

Katay Waqt Chahey Azaab Mein, Kisi Khuwab Mein Ya Saraab Mein
Jo Nazar Se Door Nikal Gaya , USay Yaad Karta  Hai Har Koi

Sar-e-Bazm Jitne Charaag Thay , Woh Tamam Ramz Shanaas Thay
Teri Chashm-e-Khush K Lehaaz Se Nahi Bolta Tha Magar Koi .. .. ..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.