Tuesday, 27 August 2013

Pin It

Widgets

Jab Guzar Gaah-e-Mohabbat Na Kushadah Hogi .. ..

Dil K Jazbon

جب  گزرگاہ محبت  نہ کشادہ ہو گی
جستجو منزل  جاناں کی زیادہ ہو گی

دل کے جذبوں پہ اندھیرے ہی مسلط ہوں گے
چاندنی جب نہ سر ِ بام ِ ارادہ ہو گی

رونق ِ محفل  بادہ ہے ہمارے دم سے
ہم نہ ہوں گے تو کہاں محفل ِ بادہ ہو گی

جب تلک ڈھانپ نہ لے چادر ِ افلاک مجھے
بے لباسی  مرے  پیکر  کا لبادہ  ہو گی 

اب اگر لوٹ کے آئیں گے بچھڑنے والے
کوئی آغوش  محبت  نہ کشادہ ہو گی

میری معصوم نظر ڈھونڈ رہی ہے اُس کو
 .. ..کوئی لڑکی تو بھرے شہر میں سادہ ہو گی



Jab Guzar Gaah-e-Mohabbat na Kushadah Hogi
Justujoo Manzil-e-Janaa Ki Ziada Hogi

Dil K Jazbon Pay Andhere He Musallat Hon Gay
Chaandni Jab Na Sar-e-baam-e-Iradah Hogi

Ronaq-e-Mehfil-e-Baadah Hayi Hamare Dum Say
Hum Na Hon Gay Tou Kahan Mehfil-e-Badah Hogi

Jab talak Dhaanp Na Lay Chaadar-e-Aflaak Mujhe
Be-Libaasi Mere Paikar Ka Libadah Hogi

Ab  Agar Lout K Aaen Gay Bicharrne Walay
Koi Aagosh-e-Mohabbat Na Kushadah Hogi

Meri  Masoom Nazar Dhoond Rahi Hai Us Ko
Koi Larki Tou Bharay Shehar Mein Sadah Hogi ,, ..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.