Thursday, 29 August 2013

Pin It

Widgets

Naiee Tarha Se Nibhane Ki Dil Ne Thaani Hai .. ..

Mohabbat Bohat Purani

نئی طرح سے نبھانے کی دل نے ٹھانی ہے
وگرنہ  اس سے محبت بہت  پُرانی  ہے

خدا وہ دن نہ دکھائے کہ میں کسی سے سنوں
کہ تو نے بھی غمِ دنیا  سے  ہار مانی  ہے

زمیں پہ رہ کے ستارے شکار کرتے ہیں
مزاج اہلِ محبت  کا  آسمانی  ہے 

ہمیں عزیز ہو کیونکر نہ شامِ غم کہ یہی
بچھڑنے والے، تیری آخری نشانی ہے

اتر پڑے ہو تو دریا سے پوچھنا کیسا؟
کہ ساحلوں سے ادھر کتنا تیز پانی ہے

بہت دنوں میں تیری یاد اوڑھ کر اتری
یہ شام کتنی سنہری ہے کیا سہانی ہے

میں کتنی دیر اسے سوچتا رہوں محسن
 .. .. کہ جیسے اس کا بدن بھی کوئی کہانی ہے


Naiee Tarha Say Nibhane Ki Dil Ne Thaani Hay
Wa-garna Us Se Mohabbat Bohat Puraani Hay

“KHUDA” Woh Din Na Dikhaaye K Main Kisi Se Sunoo
K Tu Ne Bhi Gham-e-Duniya Se Haar Maani Hay

Zameen Pay Reh K Sitaare Shikaar Kerte Hein
Mizaaj Ehl-e-Mohabbat Ka Aasmaani Hay

Hame Azeez Ho Q Kar Na Sham-e-Gham K Yehi
Bicharne Waaley , Teri Aakhri Nishaani Hay

Utarr Parey Ho Tou Darya Se Poochna Kaisa
Ke Saahilon Se Udhar Kitna Taiz Paani Hay

Bohot Dinon Main Teri Yaad Orh Kar Utri
Ye Sham Kitni Sunehri Hay Kia Suhaani Hay

Main Kitni Dair Usay Sochta Rahoon Mohsin
K  Jaise Us Ka Badan Bhi Koi Kahani Hay…




Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.