Monday, 7 October 2013

Pin It

Widgets

Khalwat Mein Khula Hum Pay Keh Baibaak Thi Woh Bhi .. ..

Thi Woh Bhi

خلوت میں کھلا ہم پہ کہ بیباک تھی وہ بھی
محتاط تھے ہم لوگ بھی، چالاک تھی وہ بھی

افکار میں ہم لوگ بھی ٹھہرے تھے قد آور
پندار میں "ہم قامتِ افلاک" تھی وہ بھی

اسے پاس ادب، سنگِ صفت عزم تھا اس کا
اسے سیل طلب، صورتِ خاشاک تھی وہ بھی

جس شب کا گریباں تیرے ہاتھوں سے ہوا چاک
اے صبح کے سورج، میری پوشاک تھی وہ بھی

اک شوخ کرن چومنے اتری تھی گلوں کو
کچھ دیر میں پیوستِ رگِ خاک تھی وہ بھی

جس آنکھ کی جنبش پہ ہوئیں نصب صلیبیں
مقتل میں ہمیں دیکھ کے نمناک تھی وہ بھی

دیکھا جو اسے، کوئی کشش ہی نہ تھی اس میں
سوچا جو اسے، حاصل اور ادراک تھی وہ بھی

جو حرف میرے لب پہ رہا زہر تھا محسن
 .. .. جو سانس میرے تن میں تھی سفّاک تھی وہ بھی

Khalwat Mein Khula Hum Pay Keh Baibaak Thi Woh Bhi
Mohtaat Thay Hum Bhi, Chalaak Thi Woh Bhi

Afkaar Mein Hum Log Bhi Thehre Thay Qad-Aawar
Pindaar Mein "Hum Qamat-e-Aflaak" Thi Woh Bhi

Usay Pas-e-Adab,Sang-e-Sift Azam Tha Us Ka
Usay Seel Talab,Soorat-e-Khashaak Thi Woh Bhi

Jis Shab Ka Garaibaan'n Tere Hathon Se Hua Chaak
Ay Subha K Sooraj, Meri Poshaak Thi Woh Bhi

Ik SHokh Chaman Choomne Nikli Thi Gulo'n Ko
Kuch Dair Mein Paiwast-e-Rag-e-Khaak Thi Woh Bhi

Jis Aankh Ki Janbish Hui Nasab Saleebein
Maqtal Mein Hame Dekh K Numnaak Thi Woh Bhi

Dekha Jo Usay, Koi Kashish He Na Thi Us Mein
Socha Jo Usay, Hasil Aur Adraak Thi Woh Bhi

Jo Harf Mere Lab Pay Raha Zehar Tha Mohsin
Jo Saans Mere Tann Mein Thi Saffak Thi Woh Bhi .. ..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.