Saturday, 5 October 2013

Pin It

Widgets

Rehtay Thay Pastiyon Mein Magar Khud Pasand Thay .. ..

Sad Urdu Shayari

رہتے تھے پستیوں میں مگر خود پسند تھے
ہم لوگ اِس لحاظ سے کتنے بلند تھے

آخر کو سو گئی کھلی گلیوں میں چاندنی
کل شب تمام شہر کے دروازے بند تھے

گزرے تو ہنستے شہر کو نمناک کر گئے
جھونکے ہوائے شب کے بڑے درد مند تھے

موسم نے بال و پر تو سنوارے بہت مگر
اُڑتے کہاں کہ ہم تو اسیرِ کمند تھے

وہ ایک تو کہ ہم کو مٹا کر تھا مطمئن
وہ ایک ہم کے پھر بھی حریصِ گزند تھے

محسن ریا کے نام پہ ساتھی تھے بے شمار
جن میں تھا کچھ خلوص وہ دشمن بھی چند تھے

Rehtay Thay Pastiyon Main Magar Khud'Pasand Thay
Hum Log Is Lihaaz Say Kitnay Buland Thay

Aakhir Ko So Gayi Khuli Galiyon Main Chaandni
Kal Shab Tamaam Shehar K Darwaazay Band Thay

Guzray Tou Hanstay Shehar Ko Numnaak Kar Gaye
Jhonkay Hawa-e-Shab K Barray Dard'Mand Thay

Mosam Nay Baal-o-Par Tou Sanwaaray Bohat Magar
Urhtay Kahan K Hum Tou Aseer-e-Kamand Thay

Woh Aik Tu K Hum Ko Mita Kar Tha Mutma'in
Woh Aik Hum K Phir Bhi Harees-e-Guzand Thay

Mohsin Riya K Naam Pay Saathi Thay Be- Shumaar
Jin Main Tha Kuch Khuloos  Woh Dushman Bhi Chand Thay .. ..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.