Thursday, 28 November 2013

Pin It

Widgets

Har Roz Imtehaa’n Se Guzara Tou Mein Gaya... ...


Tou Mein Gaya


ہر روز امتحاں سے گزارا تو میں گیا
تیرا تو کچھ گیا نہیں مارا تو میں گیا

جب تک میں تیرے پاس تھا بس تیرے پاس تھا
تو نے مجھے زمیں پہ اتارا تو میں گیا

شل انگلیوں سے تھام رکھا ہے چٹان کو
چھوٹا جو ہاتھ سے یہ کنارا تو میں گیا

اپنی انا کی آہنی زنجیر توڑ کر
دشمن نے بھی مدد کو پکارا تو میں گیا

یہ طاق یہ چراغ میرے کام کے نہیں
آیا نہیں نظر وہ دوبارہ تو میں گیا

تیری شکست اصل میں میری شکست ہے
... ..تو مجھ سے ایک بار بھی ہارا تو میں گیا



Har Roz Imtehaa’n Se Guzara Tou Mein Gaya
Tera Tou Kuch Gaya Nahi Mara Tou Mein Gaya

Jab Tak Mein Teray Pass Tha Bus Teray Pass Tha
Tu Ne Mujhe Zamee’n Pay Utara Tou Mein Gaya

Shal Ungliyo’n Se Thaam Rakha Hai Chataan Ko
Chhoota Jo Hath Se Yeh Kinara Tou Mein Gaya

Apni Anaa Ki Aahani Zanjeer Torr Kar
Dushman Ne Bhi Madad Ko Pukara Tou Mein Gaya

Yeh Taaq Yeh Charaag Meray Kaam K Nahi
Aaya Nazar Nahi Woh Dobara Tou Mein Gaya

Teri Shikasht Asal Mein Meri Shikasht Hai
Tu Mujhse Aik Baar Bhi Hara Tou Mein Gaya... ..


Please Do Click +1 Button If You Liked The Post  Then Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

3 comments:

Thanks For Nice Comments.