Sunday, 3 November 2013

Pin It

Widgets

Pass Manzil K Pohanch Kar Mujhe Chorra Na Karey ... ...

Meri Kalaiee Ko

 
    پاس منزل کے پہنچ کر کوئی موڑا نہ کرے
    آدھے رستے میں ہمیشہ مجھے چھوڑا نہ کرے

    بھیک کی طرح وہ دیتا ہے رفاقت مجھ کو
    اتنا احسان میری جان پہ تھوڑا نہ کرے

    ٹوٹ کر چور اگر ہوگئی جڑنے کی نہیں
    کوئی طعنوں سے انا کو مری پھوڑا نہ کرے

    وہ حفاظت نہیں کرتا نہ کرے رہنے دو
    زخم سے میرے مرا درد نچوڑا نہ کرے

    برف لمحات میں تنہائی سے ڈر لگتا ہے
    سرد لمحوں کو مری ذات میں جوڑا نہ کرے

    چوڑیاں کر نہیں سکتی ہیں تشدد برداشت
    جاتے جاتے وہ کلائی کو مروڑا نہ کرے

    میں تیاگ آئی ہوں جس کے لیئے سب کو نیناں
     ... .کم سے کم وہ تو مرے مان کو توڑا نہ کرے​


Pass Manzil K Pohanch Kar Mujhe Morra Na Karey
Aadhay Rastey Mein Hamesha Mujhe Chorra Na Karey

Bheek Ki Tarha Woh Deta Hai Rafaqat Mujh Ko
Itna Ehsaan Meri Jaan Pay Thorra Na Karey

Toot Kar Choor Agar Hogaie Jurrney Ki Nahi
Koi Ta'ano Se Anna Ko Meri Phorra Na Karey

Woh Hifazat Nahi Karta Na Karey Rehne Dou
Zakhm Se Merey Mera Dard Nichorra Na Karey

Barf Lamhaat Mein Tanhai Se Dar Lagta Hai
Sard Lamoho'n Ko Meri Zaat Mein Jorra Na Karey

Choorriya'n Kar Nahi Sakti Hein Tashad'dud Bardasht
Jatay Jatay Woh Kalaaie Ko Marorra Na Karey

Mein Tayaag Aaee Hoon Jis K Liyeh Sab Ko Nainaa'n
Kam Se Kam Woh Tou Mere Maan Ko Torra Na Karey. ...
Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.