Monday, 9 December 2013

Pin It

Widgets

Ab Udas Phirtaey Ho Sardiyon Ki Shaamo Mein

Is Tarha Tou

اب اُداس پھرتے ہو سردیوں کی شاموں میں
اس طرح تو ہوتا ہے اسطرح کے کاموں میں

اب تو اُس کی آنکھوں کے میکدے میسر ہیں
پھر سکون ڈھونڈو گے ساغروں میں جاموں میں

دوستی کا دعوٰی کیا عاشقی سے کیا مطلب
میں ترے فقیروں میں،میں تیرے غلاموں میں

جس طرح شعیب اُس کا نام چُن  لیا  تم  نے
 ... ... اُس نے بھی ہے چُن رکھا ایک نام ناموں میں


Ab Udas Phirtey Ho Sardiyon Ki Shaamo Mein
Is Tarha Tou Hota Hai Is Tarha K Kaamo Mein

Ab Tou Uski Aankhon K Maikadey Muyassar Hein
Phir Sukoon Dhoondo Gay Saagron K Jaamo Mein

Dosti Ka Dawa Kia  Ashiqi Se Kia Talab
Mein Tere Faqeeron Mein , Mein Tere Gulamo Mein

Jis Tarha Shoaib Us Ka Naam Chun Liya Tum Ne
Usne Bhi Hai Chun Rakh Aik Naam Naamo Mein.. .....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post & Share It.
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.