Monday, 30 December 2013

Pin It

Widgets

Agar Bazm-e-Hasti Mein Aurat Na Hoti

Jannat Na Hoti

اگر بزمِ ہستی میں عورت نہ ہوتی
خیالوں کی رنگین جنت نہ ہوتی

ستاروں کے دلکش فسانے نہ ہوتے
بہاروں کی نازک حقیقت نہ ہوتی

جبینوں پہ نورِ مسرت نہ کھلتا
نگاہوں میں شانِ مروّت نہ ہوتی

گھٹاؤں کی آمد کو ساون ترستے
فضاؤں میں بہکی بغاوت نہ ہوتی

فقیروں کو عرفانِ ہستی نہ ہوتا
عطا زاہدوں کو عبادت نہ ہوتی

مسافر سدا منزلوں پر بھٹکتے
سفینوں کو ساحل کی قربت نہ ہوتی

ہر اِک پھول کا رنگ پھیکا سا رہتا
نسمِ بہاراں میں نکہت نہ ہوتی

خدائی کا انصاف خاموش رہتا
....سنا ہے کسی کی شفاعت نہ ہوتی


Agar Bazm-e-Hasti Mein Aurat Na Hoti
Khayalon Ki Rangeen Jannat Na Hoti

Sitaron K Dilkash Fasaney Na Hotey
Baharon Ki Nazuk Haqiqat Na Hoti

Jabeeno Pay Noor-e-Musarrat Na Khilta
Nigahon Mein Shan-e-Murawwat Na Hoti

Ghataou'n Ki Aamad Ko Sawan Tarastey
Fizaou'n Mein Behki Bagawat Na Hoti

Faqeeron Ko Irfan-e-Hasti Na Hota
Atta Zahidon Ko Ibadat Na Hoti

Musafir Sada Manzilon Pay Bhataktey
Safeeno Ko Sahil Ki Qurbat Na Hoti

Har Ik Phool Ka Rung Pheeka Sa Rehta
Naseem-e-Baharaa'n Mein Nighat Na Hoti

Khudai Ka Insaf Khamosh Rehta
Suna Hai Kisi Ki Shafa'at Na Hoti ... ..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post & Share It.

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.