Sunday, 22 December 2013

Pin It

Widgets

Yeh Akelay Pan Ki Udasiyan Yeh Firaq Lamhey Azaab Se

Lamhey Azaab Se

یہ اکیلے پن کی اداسیاں ،  یہ فراق لمحے عذاب سے
کبھی دشتِ دل پہ آ رکیں تیری چاہتوں کے سحاب سے

میں ہوں تجھ کو جاں سے عزیزتر میں یہ کیسے مان لوں اجنبی
تیری بات لگتی ہے وہم سی تیرے لفظ لگتے ہیں خواب سے

یہ جو میرا رنگ و روپ ہے یونہی بے سبب نہیں دوستو
میرے خوشبوؤں سے ہیں سلسلے میری نسبتیں ہیں گلاب سے

اسے جیتنا ہے تو ہمنشیں یونہی گفتگو سے نہ کام لے
کوئی چاند لاکے جبیں پہ رکھ، لا کوئی گہر تہہِ آب سے

وہی معتبر ہے میرے لئے، وہ جو حاصلِ دل و جان ہے
... .... وہ جو باب تم نے چرا لیا میری زندگی کی کتاب سے


Yeh Akelay Pan Ki Udasiyan, Yeh Firaq Lamhey Azaab Se
Kabhi Dasht-e-Dil Pay Aa Rukein Teri Chahto'n K Sahaab Se

Mein Tujhko Jaan Se Azeez Tar Mein Yeh Kaise Maan Loon Ajnabi
Teri Baat Lagti Hai Weham Si Teray Lafz Lagtey Hein Khuwab Se

Yeh Jo Mera Rang-o-Roop Hai Youn He Be-Sabab Nahi Dosto
Meray Khushbou'n Se Hein Silsilay Meri Nisbatein Hein Gulaab Se

Usay Jeetna Hai Tou Hum-Nashee'n Youn He Guftugoo Se Na Kaam Lay
Koi Chaand La K Zamee'n Pay Rakh, La Koi Gohar Teh Aab Se

Wahi Motabar Hai Meray Liye , Woh Jo Hasil-e-Dil-o-Jaa'n Hai
Woh Jo Baab Tum Ne Chura Liya Meri Zindagi Ki Kitaab Se.. ...


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post & Share It.

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.