Friday, 10 January 2014

Pin It

Widgets

Agar Na Aag Laga Doon Tou Daag Naam Nahi

Dil Jalon Se


    کبھی فلک کو پڑا دل جلوں سے کام نہیں
    اگر نہ آگ لگا دوں تو داغ نام نہیں

    وفورِ یاس نے یاں کام ہے تمام کیا
    زبانِ یار سے نکلی تھی نا تمام نہیں
  
    وہ کاش وصل کے انکار پر ہی قائم ہوں
    مگر انہیں تو کسی بات پر قیام نہیں

    الہٰی تو نے حسینوں کو کیوں کیا پیدا
    کچھ ان کی ذات سے دنیا کا انتظام نہیں

    سنائی جاتی ہیں در پردہ گالیاں مجھ کو
    جو میں کہوں، تو کہیں، آپ سے کلام نہیں

    وہ آئیں گے شبِ وعدہ، یقیں نہیں اے دل
    چراغ گھی کے جلاؤں ، یہ ایسی شام نہیں

    سوائے جور و جفا، ماورائے بغض و دغا
    بتوں کے واسطے دنیا میں کوئی کام نہیں

    دباؤ کیا ہے سنے، وہ جو آپ کی باتیں
  .. ..رئیس زادہ ہے داغ، آپ کا غلام نہیں

Kabhi Falak Ko Parra Dil Jalon Se Kaam Nahi
Agar Na Aag Laga Doon Tou Daag Naam Nahi

Wafoor-e-Yaas Ne Yaan Kaam Hai Tamam Kia
Zayan-e-Yaar Se Nikli Thi Na Tamam Nahi

Woh Kash Visl K Inkaar Par He Qayaam Hon
Magar Uneh Tou Kisi Baat Par Qayaam Nahi

Elaahi Tu Ne Haseeno Ko Kiun Kia Paida
Kuch Inki Zaat Se Dunya Ka Intazaam Nahi

Sunai Jati Hein Dar-Parda Galiyan Mujh Ko
Jo Mein Kahon, Tou Kaheen, Aap Se Kalaam Nahi

Woh Aaen Gay Shab-e-Wada, Yaqeen Nahi Ay Dil
Charaag Ghee K Jalaon , Yeh Aisi Shaam Nahi

Siwaey Joro Jafa, Maaveraey Bugz-O-Daga
Buton K Wastey Dunya Mein Koi Kaam Nahi

Daba'o  Kia Hai Sunay, Woh Jo Apki Batein
Rais Zada'h Hai Daag, Aapka Ghulaam Nahi... ..



 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.