Friday, 28 February 2014

Pin It

Widgets

Bharay Shehar Mein Wohi Aik Shakhs Hai Be Khabar Meray Haal Se

Be Khabar Mere

    جو بلند بام ِ حروف سے ، جو پرے ہے دشت ِ خیال سے
 وہ کبھی کبھی مجھے جھانکتا ہے غزل کے شہر ِ جمال سے

میں کروں جو سجدہ تو کس طرف کہ مرا وہ قبلہء دید تو
کبھی شرق و غرب سے جلوہ گر ہے ،کبھی جنوب و شمال سے

ابھی رات باقی ہے قصہ خواں ، وہی قصہ پھر سے بیان کر
جو رقم ہوا تھا کرن کرن ، کسی چاند رخ کے وصال سے

میں جہاں بھی تھا ترے حسن کے کسی زاویے کا اسیر تھا
 میں تو ایک پل بھی نکل سکا نہ کبھی محیط ِ جمال سے

کبھی خود کو تجھ میں سمو کے میں لکھوں چاہتوں کے مکالمے
کبھی نام اپنا نکال لوں ترے نام کی کسی فال سے

جو ترے خیال کو جاوداں ، جو مرے سُخن کو اَمر کرے
وہی ایک لمحہ تراش لوں ترے ہجر کے مہ و سال سے

مری عمر ساری گزر گئی ہے رشید جس کے طواف میں
.... بھرے شہر میں وہی ایک شخص ہے بےخبر مرے حال سے



Jo Buland Baam-E-Huroof Se, Jo Paray Hai Dasht-E-Khayal Se
Woh Kabhi Kabhi Mujhe Jhankta Hai Ghazal K Shehr-E-Jamal Se

Mein Karon Tou Sajda Kis Taraf Keh Mera Woh Qibla-E-Deed Tou
Kabhi Shirq-O-Girb Se Jalwa Gar Hai, Kabhi Junoob-O-Shumaal Se

Abhi Raat Baqi Hai Qissa Khuwaa'n, Wohi Qissa Phir Se Bayaan Kar
Jo Raqam Hua Tha Kiran Kiran, Kisi Chaand Rukh K Visaal Se

Mein Jahan Bhi Tha Teray Husn K Kisi Zaaviye Ka Aseer Tha
Mein Tou Aik Pal Bhi Nikal Saka Na Kabhi Moheet-E-Jamal Se

Kabhi Tujhko Khud Mein Samo'n K Mein Likhon Chahaton K Mukalmay
Kabhi Naam Apna Nikaal Koon Teray Naam Ki Kisi Faal Se

Jo Teray Khayal Ko Jawadaa'n, Jo Meray Sukhan Ko Amar Karey
Wahi Aik Lamha Taraash Loon Teray Hijar K M    Saal Se

Meri Umar Saari Guzar Gai Hai Rasheed Jis K Tawaaf Mein
Bharay Shehar Mein Wohi Aik Shakhs Hai Be Khabar Meray Haal Se...


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.