Saturday, 8 February 2014

Pin It

Widgets

Jo Hum Se Mil K Bicharr Jaey Woh Hamara Nahi

Woh Hamara Nahi

سمجھ رہے ہیں اور بولنے کا یارا نہیں
جو ہم سے مل کے بچھڑ جائے وہ ہمارا نہیں

ابھی سے برف اُلجھنے لگی ہے بالوں سے
ابھی تو قرضِ ماہ و سال بھی اُتارا نہیں

سمندورں کو بھی حیرت ہوئی کہ ڈوبتے وقت
کسی کو ہم نے مد د کے لیئے پکارا نہیں

جو ہم نہیں تھے تو پھر کون تھا سرِ بازار
جو کہ رہا تھا کہ بکنا ہمیں گوارا نہیں

ہم اہلِ دل ہیں محبت کی نسبتوں کے امیں
..... ہمارے پاس زمینوں کا گوشوارہ نہیں

Samajh Rahey Hein Aur Bolney Ka Yara Nahi
Jo Hum Se Mil K Bicharr Jaey Woh Hamara Nahi

Abhi Se Barf Ulajhney Lagi Hai Baalon Se
Abhi Tou Qarz-o-Mah-o-Saal Bhi Uatara Nahi

Samandaro'n Ko Bhi Hairat Hui Keh Doobtey Waqt
Kisi Ko Hum Ne Madad K Liye Pukara Nahi

Jo Hum Nahi Thay Tou Phir Kon Tha Sar-e-Bazaar
Jo Keh Rah Tha Keh Bikna Hamei'n Gawara Nahi

Hum Ehl-e-Dil Hein Mohabbat Ki Nisbato'n K Ameen
Hamare Pass Zameeno Ka Goshwara Nahi .........


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.