Monday, 17 March 2014

Pin It

Widgets

Mein Hosh Mein Tha Tou Phir Us Pe Mar Gaya Kaisay



  
میں ھوش میں تھا تو پھر اس پہ مر گیا کیسے
یہ زہر میرے لہو میں اتر گیا کیسے

کچھ اس کے دل میں لگا وٹ ضرور تھی
ورنہ وہ میرا ھاتھ دبا کر گزر گیا کیسے

ضرور اس کی توجہ کی رہبری ھوگی
نشے میں تھا تو اپنے ھی گھر گیا کیسے۔

جسے بھلا ئے ھوئے کئی سال ھو گئے کامل
..میں آج اس کی گلی میں سے گزر گیا کیسے۔

Mein Hosh Mein Tha Tou Phir Us Pe Mar Gaya Kaisay
Yeh Zehar Meary Lahoo Mein Utar Gaya Kaisay

Kuch Us K Dil Mein Lagawat Zaroor Thi Warna
Woh Mera Hath Daba Kar Guzar Gaya Kaisay

Zaroor Us Ki Tawajjo Ki Rehbari Hogi
Nashay Mein Tha Tou Apne He Ghar Gaya Kaisay

Jisay Bhulaey Huey Kai Saal Ho Gaey Kamil
Mein Aaj Uski Gali Se Guzar Gaya Kaisay. ....

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.