Friday, 30 May 2014

Pin It

Widgets

Aisay Mosam Mein Mohabbat Pay Zawaal Aatey Hein



مجھ سے کہتا ہے کبھی دل میں ملال آتے ہیں
کیسے کیسے میرے دشمن کو سوال آتے ہیں

یہ جو ہم روتے ہیں چھپ کر کبھی تنہائی میں
رفتہ رفتہ تجھے آنکھوں سے نکال آتے ہیں

ہم محبت پے بھی احسان کوئی رکھتے نہیں
نیکیاں کرتے ہیں دریاؤں میں ڈال آتے ہیں

بس اسی خوف سے سوئے نہیں اک مدت سے
ہجر ملتا ہے اگر خواب وصال آتے ہیں

پھول کھل جائیں تو اس شخص سے کم کم ملنا
..ایسے موسم میں محبت پے زوال آتے ہیں
  

Mujhse Kehta Hai Kabhi Dil Mein Malaal Aatey Hein
Kaisey Kaisey Merey Dushman Ko Sawaal Aatey Hein

Yeh Jo Hum Rotey Hein Chup Kar Kabhi Tanhai Mein
Rafta Rafta Tujhe Aankhon Se Nikaal Aatey Hein

Hum Mohabbat Pe Bhi Ehsaan Koi Rakhte  Nahi
Naikiyaan Karte Hein Daryaaon Mein Daal Aatey Hein

Bus Isi Khof Se Soey Nahi Ik Muddat Se
Hijr Milta Hai Agar Khuwaab-E-Visaal Aatey Hein

Phool Khil Jaen Tou Us Shakhs Se Kam Kam Milna
Aisay Mosam Mein Mohabbat Pay Zawaal Aatey Hein..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

No comments:

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.