Monday, 23 June 2014

Pin It

Widgets

Chalta Hoon Sar Utha K Mein Kitney Waqar Se


Sad Urdu Ghazlein

عزت ملی وہ پیرہن  تار تار سے
چلتا ہوں سر اُٹھا کے میں کتنے وقار سے

ممکن ہے یہ سیارہ مُجھے چھوڑنا پڑے
تنگ آ گیا ہوں  گردش  لیل و نہار سے

اب بھی ترے وصال کے موسم کا ایک پل
باہر کھڑا ہوا ہے غموں  کی قطار سے

شاید یہ آفتاب بدلنا  پڑے  مُجھے
یہ آئنہ بھی اٹ گیا گرد و غبار سے

رکھا ہوا تھا آنکھ میں صحرا سمیٹ کر
تر  ہو گیا  ہے درد کی اک آبشار سے

ہے میری پُختگی پہ الگ کوزہ گر کو ناز
ہے خاک سُرخرو مرے نقش و نگار سے

اک موج ـ تُند و تیز کے ہاتھوں میں آ گیا
میں ہمکنار ہوتا ہوا بے کنار سے

ارشاد اس برس بھی اُسے تشنگی ملی
..جس شاخ  گُل کو آس تھی ابر بہار سے


Izzat Mili Woh Pairhan-E-Taar Taar Se
Chalta Hoon Sar Utha K Mein Kitne Waqar Se

Mumkin Hai Yeh Sayyara'h Mujhe Chorrna Parrey
Tang Agaya Hoon Gardish-E-Lail-O-Nehaar Se

Ab Bhi Terey Visaal K Mosam Ka Aik Pal
Bahar Kharra Hua Hai Ghamon Ki Qataar Se

Shayad Yeh Aftaab Badalna Parrey Mujhe
Yeh Aaiena Bhi Utt Gaya Gard-O-Gubaar Se

Rakha Hua Tha Aankh Mein Sehra Samait Kar
Tar Ho Gaya Hai Dard Ki Ik Aabshaar Se

Hai Meri Pukhtagi Pay Alag Koozah Gar Ko Naaz
Hai Khaak Surkhroo Merey Naqsh-O-Nigaar Se

Ik Mouj-E-Tand-O-Taiz K Hathon Mein Aagaya
Mein Hum Kinaar Hota Hua Be-Kinaar Se

Irshaad Is Baras Bhi Usay Tishnagi Mili
Jis Shakh-E-Gul Ko Aas Thi Abr-E-Bahaar Se..

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.