Monday, 9 June 2014

Pin It

Widgets

Hum Apna Pait Duaaon Se Bharney Waaley Thay

Duaa Urdu Poetry
  
ستارے چھو کے زمیں پر اترنے والے تھے
ہم  اپنا پیٹ  دعاؤں سے  بھرنے والے تھے

ہم آسمان کے بیٹے تھے اور زمیں والے
ہمارے عجز کی  تقلید  کرنے  والے تھے

تمھارے ہاتھ میں سورج گری کا منصب تھا
ہمارے  شہر سے  دریا  گزرنے  والے تھے

تمام  شہر تھا  لشکر کشی  پہ  آمادہ
وہ حبس تھا کہ ابابیل مرنے والے تھے

خزاں کے  پیڑ  تھے ماتم گُسار اور  پتے
 .... ہوائے تازہ  پہ  الزام  دھرنے  والے تھے


Sitarey Chhoo K Zameen Pay Utarney Waaley Thay
Hum Apna Pait Duaaon Se Bharney Waaley Thay

Hum Aasmaan K Betay Thay Aur Zameen Waaley
Hamare Ijuz Ki Taqleed Karney Waaley Thay

Tumhare Haath Mein Sooraj-Gari Ka Mansab Tha
Hamare Shehar Se Darya Guzarney Waaley Thay

Tamaam Shehar Tha Lashkar Kashi Pay Aamada’h
Woh Habs Tha Ke’h Ababee- Marney Waaley Thay

Khizaan K Pairr Thay Matam Gusaar Aur Pattay
Hawa-E-Tazah Pay Ilzaam Dharney Waaley Thay....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.