Sunday, 8 June 2014

Pin It

Widgets

Kabhi Akhbaar Parh Lena Kabhi Akhbaar Ho Jana


اچانک دِلرُبا موسم کا دِل آزار ہو جانا
دُعا آساں نہیں رہنا سُخن دُشوار ہو جانا

تمہیں دیکھیں نگاہیں اور تُم کو ہی نہیں دیکھیں
محبت کے سبھی رشتوں کا یوں نادار ہوجانا

ابھی تو بے نیازی میں تخاطب کی سی خوشبو تھی
ہمیں اچھا لگا تھا درد کا دلدار ہو جانا

اگر سچ اتنا ظالم ہے تو ہم سے جھوٹ ہی بولو
ہمیں آتا ہے پت جھڑ کے دنوں گُل بار ہو جانا

ہوا تو ہم سفر ٹھہری سمجھ میں کِس طرح آئے
ہواوں کا ہماری راہ میں دیوار ہو جانا

ہمارے شہر کے لوگوں کا اب احوال اتنا ہے
کبھی اخبار پڑھ لینا کبھی اخبار ہو جانا.... 


Achanak Dilruba Mosam Ka Dil Aazaar Ho Jana
Dua Aasaa’n Nahi Rehna Sukhan Dushwaar Ho Jana

Tumeh Dekhein Nigahein Or Tumhi Ko Nahi Dekhen
Mohabbat K Sabhi Rishton Ka Yun Nadaar Ho Jana

Abhi Tou Be-Niyazi Mein Takhtub Ki Si Khushbu Thi
Hamein Acha Laga Tha Dard Ka Dildaar Ho Jana

Agar Such Itna Zaalim Hai Tou Hum Se Jhoot He Bolo
Hamein Aata Hai Patt-Jharr K Dino Gul Baar Ho Jana

Hawa Tou Humsafar Thehri Samjh Mein Kis Tarha Aaey
Hawaaon Ka Hamari Raah Mein Diwaar Ho Jana

Hamare Shehar K Logon Ka Ab Ehwaal Itna Hai
Kabhi Akhbaar Parh Lena Kabhi Akhbaar Ho Jana....


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

1 comment:

Thanks For Nice Comments.