Thursday, 21 August 2014

Pin It

Widgets

Zehan Se Dil Ka Baar Utra Hai

New Sad Poetry
  
    ذہن سے دل کا بار اترا ہے
    پیرہن تار تار اترا ہے

    ڈوب جانے کی لذّتیں مت پوچھ
    کون ایسے میں پار اترا ہے؟

    ترک مئے کر کے بھی بہت پچھتائے
    مدّتوں میں خُمار اترا ہے

    دیکھ کر میرا دشتِ تنہائی
    رنگِ رُوئے بہار اترا ہے

    پچھلی شب چاند میرے ساغر میں
    .......پے بہ پے، بار بار اترا ہے


Zehan Se Dil Ka Baar Utra Hai
Pairhan Taar Taar Utra Hai

Doob Janay Ki Lazatei'n Mat Pooch
Kon Aisay Mein Paar Urta Hai?

Tark Maiy Kar K Bhi Bohat Pachtaey
Muddaton Mein Khumaar Utra Hai

Dekh Kar Mera Dasht-e-Tanhai
Rung Roey Bahaar Utra Hai

Pichli Shab Chaand Mere Sagar Mein
Pay Ba Pay , Baar Baar Utra Hai.......

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

5 comments:

Thanks For Nice Comments.