Sunday, 28 September 2014

Pin It

Widgets

Bujha K Rakh De Yeh Koshish Bohat Hawa Ki Thi

Sad Urdu Ghazals

بُجھا کے رکھ دے یہ کوشش بہت ہَوا کی تھی
مگر، چراغ میں کچھ روشنی انا کی تھی

مِری شِکست میں کیا کیا تھے مُضمَرات نہ پُوچھ
عدُو کا ہاتھ تھا، اور چال آشنا کی تھی

فقیہہِ شہر نے بے زار کر دیا، ورنہ
دِلوں میں قدر بہت خانۂ خُدا کی تھی

ابھی سے تم نے دُھواں دھار کر دیا ماحول
ابھی تو سانس ہی لینے کی اِبتدا کی تھی

شِکست وہ تھی، کہ جب میری سربُلندی کی
مِرے عدُو نے مِرے واسطے دُعا کی تھی

اب ہم غبارِ مہ و سال کے لپیٹ میں ہیں
....ہمارے چہرے پہ رونق کبھی بَلا کی تھی
Bujha K Rakh De Yeh Koshish Bohat Hawa Ki Thi
Magar , Charaagh Mein Kuch Roshni Anaa Ki Thi

Meri Shikasht Mein Kia Kia Thay Musammirat Na Pooch
Uddo Ka Haath Tha, Aur Chaal Aashna Ki Thi

Fiqah-E-Shehar Ne Be-Zaar Kar Diya , Warna
Dilon Mein Qadar Bohat Khana-E-Khuda Ki Thi

Abhi Se Tum Ne Dhuwaan Dhaar Kar Diya Mahool
Abhi Tou Saans He Lainey Ki Ibtida Ki Thi

Shikasht Woh Thi , Ke'h Jab Meri Sar-Bulandi Ki
Merey Uddo Ne Merey Wastey Duaa Ki Thi

Ab Hum Gubar-E-Maho-Saal Ki Lapait Mein Hein
Hamarey Chehrey Pay Ronaq Kabhi Bala Ki Thi.......


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

4 comments:

Thanks For Nice Comments.