Tuesday, 16 September 2014

Pin It

Widgets

Honton Se Uska Lums Uthaya Tha Aur Bus

Best Romantic Poetry

ہونٹوں سے اُس کا لمس اٹھایا تھا اور بس
اک زلزلہ وجود میں آیا تھا اور بس

تیر و کماں بھی ٹھیک' نشانہ بھی ٹھیک تھا
دشمن مرے حصار میں آیا تھا اور بس

احسان اس پہ اتنا بڑا تو نہیں مِرا
دریا کو ڈوبنے سے بچایا تھا اور بس

مجھ کو خبر نہیں تھی کہ جل جائیں گے درخت
جنگل میں ایک اشک بہایا تھا اور بس

پھر روشنی اترنے لگی تھی وجود میں
..دیوان میر دل سے لگایا تھا اور بس

Honton Se Uska Lums Uthaya Tha Aur Bus
Ik Zalzala Wujood Mein Aaya Tha Aur Bus

Teer-O-Kamaa'n Bhi Theek , Nishana Bhi Theek Tha
Dushman Merey Hisaar Mein Aaya Tha Aur Bus

Ehsaan Us Pay Itna Barra Tou Nahi Mera
Darya Ko Doobney Se Bachaya Tha Aur Bus

Mujhko Khabar Nahi Thi K Jal Jaen Gay Darakht
Jungle Mein Aik Ashk Bahaya Tha Aur Bus

Phir Roshni Utarney Lagi Thi Wujood Mein
Diwaan-E-Meer Ne Dil Se Lagaya Tha Aur Bus....


  Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

4 comments:

Thanks For Nice Comments.