Wednesday, 10 September 2014

Pin It

Widgets

Itna Na Yaad Kar Usay Thakti Hai Yaad Bhi

Best Yaad Poetry


اِتنا نہ یاد کر اْسے تھکتی ہے یاد بھی
اے دل ذرا سنبھل کہ بہکتی ہے یاد بھی

دْوری تو اور پھول کھلاتی ہے قرب کے
ویرانے میں تو اور مہکتی ہے یاد بھی

تیرے ہی پاس ہوگا مرا گمشدہ سکوں
تیرے ہی اردگرد بھٹکتی ہے یاد بھی

سہما ہوا ہے دل کسی خوف ِگزشتہ سے
اب تو مرے بدن میں دھڑکتی ہے یاد بھی

بینائ تو غبار ہوئ انتظار میں
آنکھوں میں میری اب تو کھٹکتی ہے یاد بھی

کیسا ہجوم ِ درد ہے اے دل کہ ان دِنوں
دم بھی الجھ رہا ہے اٹکتی ہے یاد بھی

شاید وہ لوٹ آۓ کسی طور باغ میں
 ......طائر پکارتے ہیں چہکتی ہے یاد بھی
Itna Na Yaad Kar Usay Thakti Hai Yaad Bhi
Ay Dil Zara Sanbhal Ke'h Behakti Hai Yaad Bhi

Doori Tou Aur Phool Khilati Hai Qurb K
Viraney Mein Tou Aur Mehakti Hai Yaad Bhi

Terey He Paas Hoga Mera Gumshuda Sukoon
Terey He Ird Gird Bhatakti Hai Yaad Bhi

Sehma Hua Hai Dil Kisi Khof-E-Guzishta Se
Ab Tou Merey Badan Mein Dharrakti Hai Yaad Bhi

Beenaai Tou Gubaar Hui Intazaar Mein
Aankhon Mein Meri Ab Tou Khatakti Hai Yaad Bhi

Kaisa Hujoom-E-Dard Hai Ay Dil Ke'h In Dino
Dum Bhi Ulajh Raha Hai Atakti Hai Yaad Bhi

Shayad Woh Lout Aaey Kisi Tor Baagh Mein
Taaiyer Pukartey Hein Chehakti Hai Yaad Bhi...

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

3 comments:

  1. اِتنا نہ یاد کر اْسے تھکتی ہے یاد بھی awesome line of the post thnx for sharing

    ReplyDelete

Thanks For Nice Comments.