Friday, 26 September 2014

Pin It

Widgets

Kho Chukey Hein JisKo Woh Jageer Lay Kar Kia Karen

Sad Urdu Poetry

کھو چکے ہیں جس کو وہ جاگیر لے کر کیا کریں
اک پرائے شخص کی تصویر لے کر کیا کریں

ہم زمیں زادے , ستاروں سے ہمیں کیا واسطہ
دل میں ناحق خواہش تسخیر لے کر کیا کریں

عالموں سے زائچے بنوائیں کس امید پر
خواب ہی اچھے نہ تھے تعبیر لے کر کیا کریں

اعتبارِ حرف کافی ہے تسلی کیلے
پکے کاغذ پر کوئی تحریر لے کر کیا کریں

اپنا اک اسلوب ہے ،اچھا برا جیسا بھی ہے
لہجۂ غالب ، زبان میر  لے کر کیا کریں

شمع اپنی  ہی  بھلی  لگتی ہے  اپنے طاق  پر
...مانگے تانگے کی کوئی تنویر لے کر کیا کریں
Kho Chukey Hein JisKo Woh Jageer Lay Kar Kia Karen
Ik Paraey Shakhs Ki  Tasveer Lay Kar Kia Karen

Hum Zameen Zaday, Sitaron Se Hamein Kia Waasta
Dil Mein Nahaq Khuwahish-E-Taskheer Lay Kar Kia Karen

Aalimo'n Se Zaiechay Banwaein Kis Ummeed Par
Khuwab He Achay Na Thay Tabeer Lay Kar Kia Karen

Aitabar-E-Harf Kaafi Hai Tasalli K Liye
Pakkay Kagaz Par Koi Tehreer Lay Kar Kia Karen

Apna Ik Asloob Hai , Acha Bura Jaisa Bhi Hai
Lehja-E-Ghaalib , Zuban-E-Meer Lay Kar Kia Karen

Shamma Apni He Bhali Lagti Hai Apney Taaq Par
Mangay Tangay Ki Koi Tanveer Lay Kar Kia Karen....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

5 comments:

Thanks For Nice Comments.