Wednesday, 8 October 2014

Pin It

Widgets

Aik Ho Kar Bhi Hazaron Se Ulajh Parrta Hai

Great Ghazals Collection

ایک ہو کر بھی ہزاروں سے اُلجھ پڑتا ہے
عشق پیدل بھی سواروں سے اُلجھ پڑتا ہے

سازش ِ زردی ِ موسم میں نہیں گر تُو شریک
کیوں بہاروں کے اشاروں سے اُلجھ پڑتا ہے

کوئی الزام نہیں۔۔ تم سے فقط پوچھا ہے
تیر کیا خود ہی شکاروں سے اُلجھ پڑتا ہے؟

خواہش ِ گل میں تو ملتی ہے سزا عجلت کی
یونہی دامن نہیں خاروں سے اُلجھ پڑتا ہے

گاہے گاہے تجھے کیا ہوتا ہے اللہ جانے
بے سبب اپنے ہی یاروں سے اُلجھ پڑتا ہے

ایک لمحے کے لیے چاند جو اُوجھل ہو جائے
دل وہ ضدی کہ ستاروں سے اُلجھ پڑتا ہے

ظبط دریا کا بھی دیکھا ہے  صاحب ہم نے
بوجھ پڑتے ہی کناروں سے اُلجھ پڑتا ہے۔۔

Aik Ho Kar Bhi Hazaaron Se Ulajh Parrta Hai
Ishq Paidal Bhi Sawaron Se Ulajh Parrta Hai

Sazish-E-Garmiy-E-Mosam Mein Nahi Gar Tu Shareek
Kiun Baharon K Isharon Se Ulajh Parrta Hai

Koi Ilzaam Nahi Tum Se Faqat Poocha Hai
Teer Kia Khud He Shikaron Se Ulajh Parrta Hai

Khuwahish-E-Gul Mein Tou Milti Hai Saza Ujlat Ki
Youn He Daaman Nahi Khaaron Se Ulajh Parrta Hai

Gaahay Gaahay Tujhe Kia Hota Hai Allah Janey
Be-Sabab Apne He Yaaron Se Ulajh Parrta Hai

Aik Lamhay K Liye Chaand Jo Ojhal Ho Jaaye
Dil Woh Ziddi Ke'h Sitaaron Se Ulajh Parrta Hai

Zabt Dariya Ka Bhi Dekha Hai Sahib Hum Ne
Bojh Parrtay He Kinaaron Se Ulajh Parrta Hai...

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

7 comments:

Thanks For Nice Comments.